اے جانشین شہ رسالت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

اے جانشین شہ رسالت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

Table of Contents

اے جانشین شہ رسالت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

واصف رضاواصف

نشان عظمت ، منار شوکت رفیق ہجرت رفیق ہجرت
ضیاے شمع رہ صداقت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

ترے تصدق ہے شاہراہ ذکاوت و زیرکی درخشاں
ہےتجھ سےتاب نجموم حکمت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

ہزاروں لاکھوں سلام تیرے خلوص وعشق وفا پہ ہردم
اے جانشین شہ رسالت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

لکھی ہے تاریخ کے ورق پرتری دلیری کی داستانیں
ہے ہمت افزا تری شجاعت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

ہزاروں تاج شہنشہی سے ہے اجمل واکرم ومعظم
جو تیرے سرپر ہےتاج الفت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

ہمیشہ لطف و کرم رہا ہے حبیب رب جہاں کاتجھ پر
مزار میں بھی ملی رفاقت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

تجھے وہ اوج و کمال حاصل ہوا ہے قرب شہ زمن سے
ہے تجھ پہ نازاں نبی کی امت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

کھلا جو باب عنایت شہ ترےلیےجو توماشاءاللہ
ملی نیابت ملی خلافت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

بہم ہے تسکین قلب مضطر ترے خیال سرور زاسے
ہے وجہ اقبال تیری مدحت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

مجھے بھی موصول ہورہا تری عطاٶں کاخاص حصہ
درون دل ہے تری محبت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

دعاے واصف رضا ہے دل سے تمام مقبول بارگہ ہو
ہے پیش جو ہدیہ ٕ عقیدت رفیق ہجرت رفیق ہجرت

از
واصف رضاواصف

مدھوبنی بہار

مزید پڑھیں

قلب جب یاد ابوبکر سے سرشارہوا

ہے عشق و محبت کا یہ انعام ابوبکر

قدسیوں کےلب پہ بھی ہےتذکرہ صدیق کا

Like this article?

Share on Facebook
Share on Twitter
Share on Whatsapp
Share on E-mail
Share on Linkedin
Print (create PDF)

Leave a comment