جب مدینے سے عطا خیرات ہو تو نعت ہو

جب مدینے سے عطا خیرات ہو تو نعت ہو

Table of Contents

جب مدینے سے عطا خیرات ہو تو نعت ہو

رشحات خامہ : محمد نثار نظامی

جب مدینے سے عطا خیرات ہو تو نعت ہو
جب مدینے سے عطا خیرات ہو تو نعت ہو

سید عرب و عجم کی بات ہو تو نعت ہو
مرتسم دل میں جو ان کی ذات ہو تو نعت ہو

کاسۂ فکروتخیل میں نہیں آب ثنا
جب مدینے سے عطا خیرات ہوتو نعت ہو

عشق سے ان کے معطر ہے مرا پورا وجود
دل کے آنگن میں نبی کی ذات ہو تو نعت ہو

حیطۂ فکرونظر سے ہے ورا تیری ثنا
جو میسر وصل کی سوغات ہوتو نعت ہو

اے نظامی زندگی میں کم سے کم اک بارہی
ان کے روضے پر گزر اک رات ہو تو نعت ہو

رشحات خامہ : محمد نثار نظامی

مہراج گنج۔

مزید پڑھیں

نعت شریف،جو لب پر مرے یا نبی یانبی ہے

نعت،تیرے جمال نے حیرت میں ڈال رکھا ہے

کرتے رہیں حضور کی مدحت ہزاربار

نہ پوچھ مجھ کو ملا کیا سے کیا مدینے سے

نعت نبیﷺکوئے نبی کا در ہو کہ دیوار  خوب ہے

نعت،ذکر وجہ کن کی رفعت لاجواب

Like this article?

Share on Facebook
Share on Twitter
Share on Whatsapp
Share on E-mail
Share on Linkedin
Print (create PDF)

Leave a comment