درود پڑھیے کہ مہکے گلاب فکروخیال

درود پڑھیے کہ مہکے گلاب فکروخیال

Table of Contents

درود پڑھیے کہ مہکے گلاب فکروخیال

واصف رضاواصف

درود پڑھیے کہ مہکے گلاب فکروخیال
سلام پڑھیے کہ چمکے حیات مثل ہلال

درود پڑھیے کہ پرنور غرفہ ٕدل ہو
سلام پڑھیے کہ خیر کثیر حاصل ہو

درود پڑھیے کہ تنزیل نور رحمت ہو
سلام پڑھیے کہ تشکیل حرف مدحت ہو

درود پڑھیے کہ ورد وفا شعار ہےیہ
سلام پڑھیے کہ افزاٸش وقار ہےیہ

درود پڑھیے کہ روشن ہو شاہراہ حیات
سلام پڑھیے کہ آسانیاں ہوں بعد ممات

درود پڑھیے کہ فضل خدا مدام ملے
سلام پڑھیے کہ لطف شہ انام ملے

درود پڑھیے کہ تحلیل ہووجود میں نور
سلام پڑھیے کہ قلب و جگررہیں مسرور

درود پڑھیے کہ شہدِ نوا ملے واصف
سلام پڑھیے کہ ظل لوا ملے واصف

رشحات قلم
واصف رضاواصف

مدھوبنی بہار

مزید پڑھیں

نور سے ان کے ہوا سارا زمانہ نوری

شان عالی ہےمرے صدرشریعت تیری

قلزم تقوی کے اک نایاب گوہر ، یارغار

Like this article?

Share on Facebook
Share on Twitter
Share on Whatsapp
Share on E-mail
Share on Linkedin
Print (create PDF)

Leave a comment